Ashar

An original translation of a poem by the Pakistani writer, Faiz Ahmed Faiz, from his anthology titled

نسخہ ہائے وفا 

(Leaves of Fidelity)



رات یوں دل میں تری کھوئی ہوئی یاد آئی
جیسے ویرانے میں چپکے سے بہار آ جائے
جیسے صحراؤں میں ہولے سے چلے بادِ نسیم
جیسے بیمار کو بے وجہ قرار آ جائے

دل رہینِ غمِ جہاں ہے آج
ہر نفس تشنۂ فغاں ہے آج
سخت ویراں ہے محفلِ ہستی
اے غمِ دوست تو کہاں ہے آج


Tonight, the lost memory of you touches my heart,
Like the spring that blooms a lonely field,
Like the gentle breeze that walks over a desert,
with great care,
Like the dying man who, for no reason, smiles

...

Today, the heart lives with grief
every nerve is clamoring with thirst
These crowded, happy places seem austerely barren
O friend! there is sorrow everywhere, where are you